کد خبر ۶۳۱ انتشار : ۱۳ شهریور ۱۳۹۵ ساعت ۱۹:۱۴
حجۃ الاسلام و المسلمین اختری کا بیان

ایرانیوں کو اس سال حج پر نہ بھیجنے کی وجوہات، حجۃ الاسلام و المسلمین اختری کا بیان

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سکریٹری نے حجاج بیت اللہ الحرام کے ساتھ سعودی عرب کے حکام کی توہین آمیز رفتار اور ان کی ناقص کارکردگی کی بنا پر حجاج کی جان اور عزت کو لاحق خطرات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایرانیوں کی جان اور عزت محفوظ رکھنے کے لئے اس سال ایران نےحج پرجانے کا فیصلہ نہیں کیا کیونکہ حجاج کی عزت اور جان کو خطرات لاحق تھے اور سعودی عرب کے حکام حاجیوں کی عزت و تکریم کرنے کے بجائے ان کی توہین اور تذلیل کرتے ہیں۔

ہر خبررساں ایجنسی کے سیاسی شعبہ کے نامہ نگار کے ساتھ گفتگو میں اہلبیت(ع) عالمی اسمبلی کے سکریٹری جنرل حجۃ الاسلام والمسلمین اختری نے حجاج بیت اللہ الحرام کے ساتھ سعودی عرب کے حکام کی توہین آمیز رفتار اور ان کی ناقص کارکردگی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کے حکام کی توہین آمیز رفتار، غفلت، لاپرواہی اور ان کی ناقص کارکردگی کی بنا پر حجاج کی جان اور عزت کو بڑے خطرات لاحق تھے اور سعودی عرب نے حجاج کی سکیورٹی اور عزت و اکرام کے بارے میں کوئي ضمانت نہیں دی اور ویزا صادر کرنے کے ناقص اور غیر منطقی امور پر اصرار کرتا رہا اور سعودی عرب کے غیر منطقی اور غیر انسانی شرائط کی بنا پر ایرانیوں کی جان اور عزت کو محفوظ رکھنے کے لئے اس سال ایران نے حج پرنہ جانے کا فیصلہ کیا کیونکہ سعودی عرب کے حکام کی جانب سے حجاج کی عزت اور جان کو خطرات لاحق تھے اور سعودی عرب کے حکام حاجیوں کی عزت و تکریم کرنے کے بجائے ان کی توہین اور تذلیل کرتے ہیں اور گذشتہ سال منی کا المناک واقعہ سعودی عرب کے حکام کی توہین آمیز رفتار، غفلت اور ان کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

اخبار مرتبط :

    اخرین اخبار