کد خبر ۵۶۷۳ انتشار : ۲۰ شهریور ۱۳۹۶ ساعت ۱۱:۵۸
خطبہ غدیر

خطبہ غدیر کے فراموش شده جملے

رسول خدا(ص) نے ارشاد فرمایا:اللہ کی لعنت ہو، اللہ کی لعنت ہو،اللہ کا غضب ہو،اللہ کا غضب ہو اس پر جو میرے اس قول کی مخالفت کرے اور اس پر عمل نہ کرے۔

تمام مسلمانوں پر ضروری ہے کہ وہ غور سے ایک مرتبہ پھر خطبہ غدیر کو پڑھیں،اور وہ بھی ابتداء سے انتہاء تک ۔چونکہ اس خطبہ میں بہت سی ایسی چیزیں ہیں جن کو اکثر نظر انداز کردیا جاتا ہے۔
چنانچہ خطبہ غدیر کی اس مشہور عبارت جسے ہر ایک شخص جانتا ہے:«مَنْ كُنْتُ مَوْلَاهُ فَهَذَا عَلِيٌّ مَوْلَاهُ»؛ جس کا میں مولا ہوں پس اس کے یہ علی بھی مولا ہیں؛ کو تو سب نے سنا ہے،لیکن اسی خطبہ شریف کی بہت سی عبارتیں یہاں تک کہ خود شیعوں نے بھی ان سنی کردی ہیں،لہذا خطبہ غدیر میں ایک وہ جملہ بھی ہے جسے سرکار رسالتمآب(ص) نے لوگوں کو خطاب کرتے ہوئے ارشاد فرمایا:فَأُعْلِمَ كُلَّ أَبْيَضَ وَ أَسْوَدَ أَنَّ عَلِيَّ بْنَ أَبِي طَالِبٍ (ع) أَخِي وَ وَصِيِّي وَ خَلِيفَتِي وَ الْإِمَامُ مِنْ بَعْدِي الَّذِي مَحَلُّهُ مِنِّي مَحَلُّ هَارُونَ مِنْ مُوسَى إِلَّا أَنَّهُ لَا نَبِيَّ بَعْدِي وَ هُوَ وَلِيُّكُمْ مِنْ بَعْدِ اللَّهِ وَ رَسُولِه؛پس ہر گورا و کالا یہ بات جان لے کہ علی بن ابی طالب(ع) میرا بھائی،جانشین،اور میرے بعد امام ہے،اس کا مرتبہ میرے نزدیک وہی ہے جو ہارون کا موسی کے نزدیک تھا،فرق صرف اتنا ہے کہ میرے بعد کوئی نبی نہیں ہوگا،اور یہ اللہ اور رسول کے بعد تمہارے ولی ہونگے۔(الاحتجاج،ج۱،ص۵۹) پھر اس کے بعد اسی خطبہ میں سرکار نے ارشاد فرمایا:«مَلْعُونٌ‏ مَلْعُونٌ‏ مَغْضُوبٌ‏ مَغْضُوبٌ مَنْ رَدَّ عَلَيَّ قَوْلِي هَذَا وَ لَمْ يُوَافِقْه»؛ اللہ کی لعنت ہو، اللہ کی لعنت ہو،اللہ کا غضب ہو،اللہ کا غضب ہو اس پر جو میرے  اس قول کی مخالفت کرے اور اس پر عمل نہ کرے۔ (سابق حوالہ،ص۶۰) اب کیا کوئی اس عبارت اور جملات کو سننے کے بعد بھی  لفظ مولا کو صرف دوست کے معنی میں مراد لے،اور کیوں لوگ اس عبارت میں لفظ وصی اور خلیفہ کو نظر انداز کردیتے ہیں؟
الاحتجاج، طبرسی، نشر مرتضی، مشهد، ۱۴۰۳ق، ج۱، ص۵۹و۶۰. 

 
اخبار مرتبط :

    اخرین اخبار