کد خبر ۵۳۸۸ انتشار : ۱۶ خرداد ۱۳۹۶ ساعت ۱۲:۲۳
بانی انقلاب حضرت امام خمینی(رح) کی ۲۸ ویں برسی کے موقع پر:

امام خمینی(رح)دنیا کی مشہور شخصیات کی نظر میں

افغانستان کے سابق صدر برھان الدین ربانی کے کہا:امام خمینی(رح) نے کیپٹلزم اور کمیونزم کو رد کر دیا اور ان کی نظر میں بشریت کی نجات کا راستہ صرف اور صرف اسلام کی اعلی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے میں ہے،وہ مشرقی، مغربی ظالموں کے خلاف شدت سے ڈٹے رہے اور ہر طرح کے فساد اور سازش کے ساتھ پنجہ آزمائی کی، وہ موجودہ دور میں اسلامی دنیا کی عظیم شخصیت ہیں۔

امام خمینی(رح) نے اپنی با برکت زندگی کے دوران لوگوں کے اذہان پر ایسے عظیم نقوش چھوڑے ہیں جو رہتی دنیا تک قائم رہیں گے۔
امام خمینی(رح) کے اقدامات اور افکار کے تاثرات کی حد یہ ہے کہ دنیا کی برجستہ ترین شخصیات اور ایسے لوگ جن کا انقلاب اسلامی سے دور دور تک کوئی واسطہ نہیں رہا لیکن وہ بھی امام خمینی(رح)  کی عظمت اور پاکیزہ زندگی کو دیکھتے ہوئے اپنا سر تسلیم خم کرتے ہیں اور اُنہیں اچھے الفاظ سے یاد کرتے ہیں۔
سابق سوویت یونین کے صدر میخائل گوربا چوف:
امام خمینی(رح) زمانے سے آگے کا سوچتے تھے اور وہ کسی مکان میں نہیں سما سکتے،وہ دنیا میں عظیم آثار قائم کرنے میں کامیاب رہے۔
شام کے سابق صدر حافظ الاسد:
دنیا کی ستم رسیدہ اور عرب ممالک کے دشمنوں حتی کہ اسرائیل نے بھی وحشت زدہ ہو کر کئی بار اپنے باپ امریکا سے شکوہ کیا کہ امام خمینی(رح) کی سربراہی میں کامیاب ہونے والے انقلاب کا مقابلہ کیوں نہیں کرتے کیونکہ اس کا انجام فلسطین کی کامیابی کا باعث ہے۔
افریقا کے سابق صدر نیلسن منڈیلا:
امام خمینی ایسی قائدانہ صلاحیتوں کے حامل تھے جنہوں نے خالی ہاتھوں سے ایران کے اسلامی انقلاب کو کامیابی سے ہمکنار کیا۔
امریکا کے سابق صدر جمی کارٹر:
آیت اللہ خمینی(رح) کو اپنے ملک میں ایک عظیم ہیرو کے عنوان سے پہچانا جاتا ہے۔
امریکی سیاسی امور کے ماہر، ہنری کیسینجر:
آیت اللہ خمینی(رح) کی سنجیدہ تدبیروں کی وجہ سے مغربی ممالک کو مشکلات کا سامنا ہے، ان کی سوچ اور پلاننگ اس طرح کی ہوتی تھی کہ ہر طرح کا سیاستدان اور سیاسی مفکر اس کے سامنے بے بس ہوتا،کوئی بھی اپنے ارادوں کی پیشن گوئی نہیں کر سکتا تھا، وہ دنیا میں رائج رویوں سے ہٹ کر دوسرے رویوں کی بات کرتے اور اس پر عمل پیرا ہوتے، ایسا لگتا تھا کہ ان پر الہام ہو رہا ہو، مغرب سے امام خمینی(رح) کی دشمنی الٰہی تعلیمات کا ماحصل تھیں، وہ اپنی دشمنی میں بھی خلوص نیت رکھتے تھے۔
الجزائر کے پہلے صدر احمد بن بلا:
عرب ممالک کو یہ احسان ماننا چاہیے کہ بیسیویں صدی میں اسلام، ایران کے اسلامی انقلاب اور امام خمینی(رح)  کی وجہ سے زندہ ہوا، یہ ایسا انقلاب ہے جو مغربی دنیا کو تہس نہس کرنے پر مجبور کر دے گا اور دنیا میں موجود بہت سے نظام جلد یا بدیر نابود ہو جائیں گے کیونکہ امام خمینی(رح)  کی تحریک کی آواز دنیائے اسلام کے دور ترین علاقوں تک پہنچ چکی ہے۔
پاکستان کی سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو:
دنیا میں امام خمینی(رح)  جیسے رہبر صدیوں میں ایک دفعہ پیدا ہوتے ہیں۔
پاپ جان پال دوم:
امام خمینی نے جو کام اپنے ملک اور دنیا کے وسیع حصے کے لئے انجام دیا ہے اس بارے میں نہایت احترام اور گہری سنجیدگی سے اظہار نظر کرنا چاہیے۔
ایران 2 انقلاب، کے درمیان نامی کتاب کے امریکی مؤلف یرواند ابراہیمیان:
عام طور پر امام خمینی کا تعارف ایک عام مولوی کے طور پر کرایا جاتا ہے لیکن حقیقت میں وہ ایران کے ایک بڑے خلاق شخص تھے، اپنے سیاسی نظریات کے حوالے سے بھی اور انسانوں کے لے حکمت عملی تیار کرنے کے حوالے سے اپنے مذہبی چہرے کے ساتھ بھی، ان کے کردار اور محبوبیت کی دو اہم وجوہات ہیں: پہلی وجہ، ان کی سادہ زندگی اور طاغوت کی سازشوں کو قبول نہ کرنا، ایسے ملک میں جس میں سیاستدانوں نے عیش و عشرت کی زندگی گذاری ہو، انھوں نے عارفوں جیسی پاک و پاکیزہ اور ہر قسم کے عیش و آرام کے بغیر زندگی گزاری۔
افغان جہاد کے سربراہ برہان الدین ربانی:
امام خمینی(رح)  نے کیپٹلزم اور کمیونزم کو رد کر دیا اور ان کی نظر میں بشریت کی نجات کا راستہ صرف اور صرف اسلام کی اعلی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے میں ہے،وہ مشرقی، مغربی ظالموں کے خلاف شدت سے ڈٹے رہے اور ہر طرح کے فساد اور سازش کے ساتھ پنجہ آزمائی کی، وہ موجودہ دور میں اسلامی دنیا کی عظیم شخصیت ہیں۔
اسپین میں مسلمان معاشرے کے سربراہ ریاج تاتاری:
آیت اللہ خمینی(رح) مسلمانوں کی بیداری کا باعث بنے۔
روسی مؤلف میخائیل لمشف:
ان کی فکر نے پورے عالم اسلام کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اور انھوں نے دنیائے اسلام میں امریکا اور اسرائیل کی بدمعاشی کو ثابت کیا اور ان سے مقابلہ کر کے ثابت کیا کہ انقلاب اسلامی روس اور فرانس کے مادی انقلاب سے مختلف ہے۔
الجزائر کے دانشور اور مفکر، سید صدر الدین:
امام خمینی(رح) ایک غیر معمولی شخصیت تھے،یہ انسانوں کے لیے خدا کا خاص تحفہ تھا تا کہ اسلام میں ان کے راستے کی اصلاح کر سکے۔
فلسطین کی آزادی کے لیے خلق محاذ کے سربراہ، احمد جبرئیل:
اسلامی جمہوریہ ایران کے بانی نے اسلامی تنزلی سے نجات دی، امام خمینی عالم اسلام کے مسلمانوں کو نیند سے بیدار کر کے ایک نئی زندگی دینے میں کامیاب رہے۔
کولمبیا کے مؤلف حولیان زاپاتا:
بیسویں صدی میں تین افراد دنیا میں رونما ہوئے اور تمام سیاسی میدانوں میں سیاستدانوں کی توجہ کو اپنی جانب مرکوز کیا، ان میں سے ایک گاندھی، دوسرے یحیٰی (ویٹیکن کی عوام کا لیڈر) اور تیسرے امام خمینی(رح) تھے، ان تینوں میں سے واحد وہ شخص جس کی گفتگو اور سیرت نے لوگوں پر اثر ڈالا، وہ امام خمینی تھے۔
ترکی کے عظیم وزیر اعظم ٹورگوٹ اوزال:
امام خمینی(رح)  نے ایک عظیم انقلاب برپا کیا۔
بین الاقوامی زرعی ترقی کے سابق خزانہ دار ادریس جزایری:
امام خمینی(رح)  کو صرف اور صرف بیسویں صدی کے آزاد رہبر اور کروڑوں مسلمانوں کے رہبر کا نام دینا چاہیے۔
ہندوستان کے عظیم لیڈر اندرا گاندھی کے بیٹے راجیو گاندھی:
آیت اللہ خمینی(رح)  ایک عظیم شخصیت تھے جنہوں نے اپنے ایمان اور عقیدے سے انقلاب اسلامی کو کامیابی سے ہمکنار کیا اور بادشاہی نظام کو سرنگوں کر دیا۔
مشہور مصری مؤلف محمد حسین ہیکل:
امام خمینی(رح)  ایک ایسے عظیم انسان تھے جو کسی دوسری دنیا سے آئے تھے۔

اخبار مرتبط :

    اخرین اخبار